Sidebar

20
Mon, May
49 New Articles

سورۃ : 21 الانبیاء ۔ انبیاء

உருது மொழிபெயர்ப்பு
Typography
  • Smaller Small Medium Big Bigger
  • Default Meera Catamaran Pavana

سورۃ : 21 سورۃ الانبیاء ۔ انبیاء

کل آیتیں : 112

پارہ : 17

اس سورت میں موسیٰ، ہارون، ابراھیم، لوط، اسحاق، یعقوب، نوح، داؤد، سلیمان، ایوب، اسماعیل، ادریس، ذوالکفل، یونس اور زکریا وغیرہ نبیوں کے بارے میں ذکر کیا گیاہے ، اس لئے اس سورت کا نام انبیاء رکھا گیا ہے۔  بہت ہی مہربان ، نہایت ہی رحم والے اللہ کے نام سے ... 1۔ لوگوں کے لئے ان کی تفتیش قریب آگئی ہے۔ وہ تو جھٹلائے ہوئے بے خبرہیں۔ 

2۔ ان کے پروردگار کی طرف سے جب بھی کوئی نئی نصیحت آتی ہے تو اسے وہ مذاق ہی سمجھ کر سنتے ہیں۔ 

3۔ ان کے دلوں نے بے پرواہ کرتے ہیں۔ ظالم لوگ بالکل چھپے ہوئے گفتگو357 کر تے ہیں کہ یہ تو تمہارے ہی جیسا ایک انسان کے سوا اور کون؟ دیکھتے ہوئے بھی تم اس جادو 285کے پاس جاتے ہو؟ 

4۔ (پیغمبرنے) کہا کہ میرا رب آسمانوں507 اور زمین کی ہربات جانتا ہے۔ وہ سننے والا488 اور جاننے والا ہے۔ 

5۔ وہ کہتے ہیں کہ یہ (ان کا کہنا) ایک بے معنی خواب ہے۔نہیں، اس کو اس نے گھڑلیا ہے۔ نہیں، وہ ایک شاعر ہے۔ جیسے اگلے لوگوں کو دی گئی تھی اس طرح کی نشانی وہ ہمارے پاس لے آنے دو۔ 

6۔ ان سے پہلے ہم نے ہلاک کیا ہوا کسی بھی بستی ایمان نہیں لائے توکیا یہ لوگ ایمان لائیں گے؟

7۔ (اے محمد!) تم سے پہلے ہم نے مردوں ہی کو رسول بناکر بھیجا ہے239۔ ان پر ہم نے وحی بھیجی۔اگر تم نہیں جانتے تو علم رکھنے والوں سے پوچھو۔ 

8۔ ان کا بدن بغیرغذاکاہم نے نہیں بنایا۔ وہ لوگ ہمیشہ بھی نہیں رہے۔ 

9۔ پھر ہم نے ان سے (کیا ہوا) وعدہ سچا کر دکھایا، انہیں اور جن کو ہم نے چاہا ،بچا لیا۔ حد سے گزرنے والوں کو ہلاک کر دیا۔ 

10۔ہم تمہارے پاس ایک کتاب عطا کی۔ اس میں تمہارے لئے نصیحت ہے۔ کیا تم سمجھوگے نہیں؟ 

11۔ ظلم کر نے والی کئی بستیوں کو ہم نے جڑ سے کاٹ دیا۔ اس کے بعد دوسری قوم تخلیق کی۔

12۔ جب ہمارا عذاب انہوں نے محسوس کیا تو فوراً وہاں سے بھاگ نکلے۔ 

13۔ (کہا گیا کہ) بھاگو مت۔ اپنے سامان عیش اور مکانات کی طرف لوٹ جاؤ۔ تم سے تحقیق کیا جائے گا۔ 

14۔ انہوں نے کہا کہ ہائے ہماری شامت! ہم نے ظلم ڈھا دیا۔ 

15۔ ہم نے انہیں فصل کاٹ کر جلا ئے ہوئے کی طرح بنانے تک یہی ان کا واویلہ رہا۔

16۔ آسمانوں507 اور زمین اور ان کے درمیانی چیز کو ہم نے یوں ہی مذاق کے طور پر نہیں بنایا۔

17۔اگر ہم کھیل( تماشہ) بنانا چاہتے تو اسے ہم اپنی ہی طرف سے بناتے۔ ہم ( کچھ بھی) کرنے والے ہیں۔ 

18۔ ہم سچ کو جھوٹ پر پھینک مارتے ہیں۔ وہ جھوٹ کو کچل دیتا ہے۔ تو فوراً جھوٹ مٹ جاتی ہے۔ (رب کے بارے میں) تم (غلط انداز سے) بیان کر نے کی وجہ سے تمہیں خرابی ہے۔

19۔ آسمانوں507 اور زمین میں جو کچھ ہیں سب اسی کے ہیں۔ اس کے پاس جو ہیں اس کی عبادت سے تکبر نہیں کرتے۔ اور تھکتے بھی نہیں۔ 

20۔ وہ رات اور دن تسبیح کر تے ہیں ، اکتاتے نہیں۔ 

21۔ کیا یہ زمین سے معبودوں کو تیار کر تے ہیں؟ کیا وہ زندہ کر کے اٹھائیں گے؟ 

22۔ ان دونوں(آسمانوں اور زمین) میں اللہ کے سوا اگر دوسرے معبود ہوتے تو دونوں برباد ہوچکے ہوتے۔ عرش488 کا مالک اللہ ان باتوں سے پاک 10ہے جو وہ لوگ کہتے ہیں۔

23۔ اسکے کاموں کے بارے میں پوچھا نہیں جائے گا۔ بلکہ وہ لوگ ہی پوچھے جائیں گے۔

24۔ اللہ کے سوا کیا انہوں نے معبود بنا رکھے ہیں؟ (اے محمد!) کہہ دو کہ اپنی دلیلیں لے کر آؤ۔ یہی میرے ساتھیوں کی نصیحت ہے اور مجھ سے پہلے گزرے ہوئے لوگوں کی نصیحت ہے۔پھر بھی ان میں سے اکثر لوگ حق نہیں جانتے۔ پس وہ لوگ اعراض کر نیوالے ہیں۔ 

25۔ تم سے پہلے کسی رسول کو ہم نے یہ وحی نازل کئے بغیر نہیں بھیجا کہ میرے سوا عبادت کے لائق کوئی نہیں، پس تم میری ہی عبادت کرو۔ 

26۔ وہ کہتے ہیں کہ رحمن نے اولاد بنالی ہے۔ وہ پاک10 ہے۔ بلکہ وہ (فرشتے) تو معزز بندے ہیں۔

27۔ وہ اس سے آگے بڑھ کر بات نہیں کرتے۔ اس کے حکم کے مطابق ہی عمل کرتے ہیں۔

28۔ ان کے آگے اور پیچھے جو کچھ ہے وہ جانتا ہے۔ جن کے لئے اس نے راضی ہوگیا ان کے سوا (دوسروں کو) وہ سفارش17 نہیں کرتے۔ وہ اس کے خوف سے لرزتے ہیں۔

29۔ جو یہ کہے کہ اس کے سوا میں ہی عبادت کے لائق ہوں، اس کو ہم جہنم کی سزا دیں گے۔ ظالموں کو ہم ایسے ہی بدلہ دیتے ہیں۔ 

30۔ کیا (ہمارا) انکار کر نے والے غور کرنا نہیں چاہئے تھا کہ آسمان507 اور زمین ملے ہوئے تھے، ان دونوں کو ہم ہی نے الگ کیا287اور ہر جاندار چیز کو پانی سے506بنایا۔ کیاانہیں ایمان نہیں لانا چاہئے تھا؟ 

31۔ ہم نے کھونٹے 248لگائے تاکہ انہیں زمین گرانہ دے۔ انہیں راہ پانے کے لئے کئی لمبے راستے بنائے۔ 

32۔ ہم نے آسمانوں507 کو محفوظ چھت بنایا288۔ وہ لوگ تو اس میں موجود نشانیوں کو جھٹلارہے ہیں۔

33۔ اسی نے رات اور دن، سورج اور چاند پیدا کیا۔ ہر ایک آسمانی فضا میں تیر رہے ہیں241۔ 

34۔ (اے محمد!) تم سے پہلے کسی انسان کو ہم نے ہمیشگی نہیں دی۔ اگر تم مرگئے تو کیا وہ قائم رہیں گے؟ 

35۔ ہر ایک موت کا مزہ چکھنے والے ہی ہیں۔بھلائی اور برائی کے ذریعے امتحان لینے کے لئے ہم تمہیں آزمائیں گے484۔ ہمارے ہی پاس تم لوٹائے جاؤگے۔ 

36۔(اے محمد!اللہ کا) انکار کر نے والے تمہیں جب دیکھتے ہیں تو تمہیں مذاق کی چیز سمجھتے ہیں۔ (اور کہتے ہیں کہ) کیا یہی ہیں جو تمہارے معبودوں کو تبصرہ کر نے والے؟وہ لوگ رحمن کی یادکا انکار کر نے والے ہیں۔ 

37۔ انسان جلد باز بنایا گیا ہے368۔ عنقریب میں تمہیں میری نشانیاں دکھاؤں گا۔میرے پاس جلدی نہ کرو۔ 

38۔ وہ پوچھتے ہیں کہ اگر تم سچے ہو تو یہ انتباہ کب (ہوگا)؟ 

39۔ (اللہ کا) انکار کر نے والے جہنم سے اپنا چہرہ اور پشت روک نہ سکنے والے اس وقت کو کیا جاننا نہیں چاہئے تھا؟اور نہ وہ لوگ مدد کئے جائیں گے۔

40۔ بلکہ وہ اچانک آ کر انہیں حیران کر دے گی، اسے وہ ٹال نہ سکیں گے۔ اوروہ مہلت بھی نہیں دیئے جائیں گے۔ 

41۔ (اے محمد!) تم سے پہلے کئی پیغمبر مذاق اڑائے گئے۔وہ جو مذاق اڑائے تھے، وہی ان مذاق اڑانے والوں کو آ گھیرا۔ 

42۔ پوچھو کہ رحمن سے تمہیں رات اور دن میں بچانے والا کون ہے؟ پھر بھی وہ اپنے پروردگار کی یاد کو جھٹلا رہے ہیں۔ 

43۔ کیا ان کے لئے ہمارے سوا کچھ معبود ہیں جوانہیں بچالیں؟ وہ خود اپنامدد نہیں کر سکتے۔ وہ ہم سے حفاظت بھی نہیں کئے جائیں گے۔

44۔ انہیں ہم نے عمر دراز کیااور ان کے اگلوں کو بھی سہولیات زندگی عطا کی۔ کیا انہیں غور کر نا نہیں چاہئے تھا243 کہ ہم زمین کو اس کے کناروں سے گھٹاتے آرہے ہیں؟ کیا وہ لوگ(ہمیں)جیتیں گے؟

45۔ (اے محمد!) کہہ دو کہ میں تمہیں وحی کے ذریعے ہی آگاہ کر رہا ہوں۔ جب آگاہ کیا جائے تو اس پکار کو بہرے سنتے نہیں۔ 

46۔ اگر تیرے رب کے عذاب سے تھوڑا بھی انہیں مل جائے تو وہ کہہ اٹھیں گے کہ ہائے ہماری شامت! ہم ظالم ہوگئے۔ 

47۔قیامت کے دن1 کے لئے انصاف کا ترازو قائم کریں گے۔ کسی پر ذرا بھر ظلم نہیں ہوگا۔ اگر رائی کے دانے برابر بھی ہو تو ہم اسے بھی لے آئیں گے۔ حساب لینے کے لئے ہم ہی کافی ہیں۔ 

48۔ فرق کر کے دکھانے والی اور روشنی کو (ہم سے) ڈرنے والوں کے لئے نصیحت، موسیٰ اور ہارون کو بھی عطا کی۔ 

49۔ وہ لوگ تنہائی میں اپنے رب سے ڈرتے ہیں۔ خاتمے کے وقت1 کے بارے میں بھی ڈرتے ہیں۔ 

50۔یہ ایک بابرکت نصیحت ہے، اس کو ہم ہی نے اتاراہے۔کیا تم اس کا انکار کر تے ہو؟

51۔اس سے پہلے ابراھیم کو ان کی ہدایت بخشی۔ان کے بارے میں ہم واقف تھے۔

53,52۔ وہ اپنے باپ اور اپنی قوم سے جب پوچھا کہ تم جو پرستش کررہے ہو یہ مورتیاں کیا ہیں؟ تو وہ لوگ کہنے لگے کہ ہم نے اپنے اجداد کو انہیں پرستش کر تے ہوئے دیکھا ہے26۔ 

54۔ اس نے کہا کہ تم اور تمہارے اجداد صریح گمراہی ہی میں ہو۔

55۔ انہوں نے پوچھا کہ کیا تم صحیح کہہ رہے ہو یا ہم سے مذاق کر رہے ہو؟

56۔ اس نے کہا کہ ایسا نہیں ہے۔ آسمانوں507 اور زمین کے پیدا کر نے والا پروردگار ہی تمہارا رب ہے۔ میں اس کی گواہی دینے والا ہو۔ 

57۔(اور یہ بھی کہا کہ) اللہ کی قسم! تم لوٹ کرجا نے کے بعد تمہاری بتوں کو توڑ دوں گا473۔

58۔ وہ لوگ اپنے بڑے بت کے پاس لوٹ کر آنے کے لئے اس کے سوا ان سارے بتوں کو ٹکڑے ٹکڑے کر دئے473۔ 

59۔ وہ لوگ کہنے لگے کہ ہمارے معبودوں کے ساتھ ایسا کس نے کیا؟ وہ ظالم ہے ۔

60۔ لوگوں نے کہا کہ ایک نوجوان کوہم نے ان کا تبصرہ کرتے ہوئے سناتھا۔ جسے ابراھیم کہا جا تاہے۔ 

61۔ کہنے لگے کہ اسے لوگوں کے سامنے لے آؤ۔ تاکہ وہ لوگ گواہی دیں۔ 

62۔ ان لوگوں نے پوچھاکہ اے ابراھیم!کیا تم نے ہمارے معبودوں کے ساتھ ایسا کیا؟

63۔ ابراھیم نے کہا کہ نہیں، ان میں کا بڑا بت ہی ایسا کیا ہے432۔ اگر وہ بولتے ہوں تو (ٹوٹے ہوئے) انہیں کے پاس دریافت کرلو۔ 

64۔ وہ لوگ ہوش میںآ تے ہوئے اپنے آپس میں کہنے لگے کہ تم ہی (انہیں پرستش کرنے کی وجہ سے) ظلم کر رہے ہو۔ 

65۔ پھر وہ لوگ سروں کے بل اوندھا ہو تے ہوئے کہنے لگے کہ تم توجانتے ہو کہ یہ بولتے نہیں۔

66۔ ابراھیم نے کہا کہ کیاتم اللہ کو چھوڑ کر ان کی عبادت کر تے ہو جو تمہیں کوئی فائدہ یا نقصان نہ پہنچا سکے؟ 

67۔ (اور یہ بھی کہا کہ) تف ہے تم پراوراللہ کے سوا جن کی تم عبادت کررہے ہو ان پر۔کیا تم سمجھوگے نہیں؟ 

68۔ کہنے لگے کہ تم کو (اگر کچھ ) کرنا ہی ہوتو انہیں آگ میں جلاکر تمہارے معبودوں کی مدد کرو۔

69۔ ہم نے کہا کہ اے آگ! ابراھیم پر ٹھنڈی اور سلامتی بن جا269۔ 

70۔ ان کے خلاف انہوں نے سازش کی۔ ہم نے انہیں نقصان اٹھانے والے بنا دیا۔ 

71۔ ان کو اور لوط کو ہم نے دنیا والوں کے لئے برکت والی زمین میں نجات دی۔ 

72۔ انہیں اسحاق کے ساتھ مزید یعقوب بھی انعام فرمایا۔ ان سب کو نیک بنایا۔ 

73۔ ہمارے حکم کے مطابق انہیں سیدھی راہ دکھانے والے پیشوا بنایا۔ نیک عمل کرنے، نماز قائم کرنے اور زکوٰۃ ادا کر نے انہیں ہم نے وحی بھیجی۔ وہ سب ہماری ہی عبادت کرنے والے تھے۔

74۔ لوط کو ہم نے اختیار164 اور علم عطا کی۔ بے حیائی کے کام کر نے والی اس بستی سے انہیں نجات دی۔ وہ بہت برے لوگ اور جرم کر نے والے تھے۔ 

75۔ انہیں اپنی رحمت میں داخل کیا، وہ نیکوں میں سے ایک تھے۔ 

76۔ نوح اس سے پہلے جب(ہم سے) دعا کی تو ان کے لئے ہم نے (اسے) قبول کر لی۔ انہیں اور ان کے گھر والوں کو سخت تکلیف سے نجا ت دی۔ 

77۔ ہماری آیتوں کو جھوٹ سمجھنے والے لوگوں سے (بچا کر) ان کی مدد کی۔ وہ بہت برے لوگ تھے۔ پس ان سب کو ہم نے ڈبو دیا۔ 

78۔جب ایک قوم کی بکری (دوسری ایک قوم کی) کھیت میں چرنے لگی تو داؤد اور سلیمان نے جوفیصلہ کیا تھا ، اس کو یاد دلاؤ۔ ان کے فیصلہ کوہم گواہ تھے۔ 

79۔ اسے ہم سلیمان کو سمجھایا۔ دونوں ہی کو ہم نے اختیار اور علم عطا کی تھی۔ پرندوں اور پہاڑوں کو ہم داؤد کے تابع کر دیاتھا۔ وہ (اللہ کی) تسبیح کر نے لگے، ہم (کچھ بھی) کر نے والے ہیں۔

80۔ جنگ کے وقت تمہیں حفاظت کر نے والی زرہ بکتر بنانے انہیں سکھایا۔ کیا تم شکر کر نے والے ہو؟ 

81۔ ہم نے تیزوتند ہوا کو سلیمان کے تابع کردیا269۔ وہ ہمارے برکت والی زمین کی طرف ان کے حکم کے مطابق چلنے لگی۔ ہم ہر ایک چیزکے جاننے والے ہیں۔ 

82۔ شیاطین میں سے ان کے لئے غوطہ خور کے علاوہ دوسرے کام کر نے والوں کو بھی (ان کے تابع )کیا۔ ہم ان کے نگران تھے۔ 

84,83۔ جب ایوب نے دعا کی کہ مجھے تکلیف پہنچی ہے۔تو رحم کر نے والوں میں سب سے بڑارحم کرنے والا ہے تو ہم نے ان کی دعا قبول کرلی۔ان پر آئی ہوئی تکلیف کو دور کیا۔ ان کے گھر والوں کو ، ان کے ساتھ ان جیسے لوگوں کو بھی ہم نے اپنی رحمت سے عطا کی۔ عبادت گزار وں کے لئے یہ نصیحت ہے26۔

85۔ اسماعیل، ادریس اور ذوالکفل یہ سب صبر کر نے والے تھے۔ 

86۔ انہیں اپنی رحمت میں داخل کر لیا۔ وہ نیک لوگ تھے۔ 

87۔ مچھلی والے395 (یونس) غصہ سے چلے گئے۔ اس نے خیال کیا کہ ہم اس پر قدرت نہیں رکھتے۔ پھر اس نے اندھیروں سے303 پکار اکہ تیرے سوا عبادت کے لائق کوئی نہیں، تو پاک10 ہے۔ میں ظلم کر نے والوں میں سے ہوگیا۔

88۔ ان کی دعا قبول کر لی۔ غم سے انہیں نجات دی۔ اسی طرح ہم ایمان والوں کو نجات دیتے ہیں۔

90,89۔ زکریا نے جب اپنے پروردگار کو پکارا کہ اے میرے پروردگار! مجھے تنہا نہ چھوڑدے، توہی بہتریں وارث ہے، تو ہم نے ان کے لئے (ان کی دعا ) قبول کی۔ انہیں یحیےٰ انعام میں بخشا۔ ان کی بیوی کو ان کے لئے( بچہ جنم دینے کے) قابل بنایا۔ وہ نیکی کی طرف جلدی کر نے والے ، شوق اور خوف سے ہم سے دعا کر نے والے تھے۔ ہمارے سامنے عاجزی کر تے تھے۔

91۔ اپنی عصمت کو بچانے والی عورت میں ہم نے اپنی روح پھونکا90۔ انہیں اور ان کے بیٹے کو جہاں والوں کے لئے نشانی بنادیا415۔ 

92۔تمہاری یہ امت ایک ہی امت ہے۔ میں ہی تمہارا رب ہوں۔ میری ہی عبادت کرو۔

93۔ وہ تو اپنے معا ملے میں آپس میں بٹ گئے۔ سب ہماری ہی طرف لوٹنے والے ہیں۔ 

94۔ایمان کے ساتھ نیک عمل کر نے والوں کی محنت کا کوئی انکار نہیں۔ اسے ہم درج کررہے ہیں۔ 

95۔ہم ہلاک کئے ہوئے بستی والے (بچ کر آنا) ممنوع کیا گیا ہے، وہ لوگ واپس نہیں آئیں گے۔

96۔ آخر میں یاجوج اور ماجوج 451(کی جماعت) کھول دئے جائیں گے اور وہ ہر بلندی سے تیزی سے آئیں گے۔ 

97۔ سچا وعدہ قریب آ چکا۔ اس وقت (اللہ کا) انکار کر نے والوں کی نگاہیں پھٹی کی پھٹی رہ جائیں گی۔ (وہ کہیں گے کہ) ہائے ہماری شامت! ہم اس کے بارے میں غفلت میں رہ گئے۔ نہیں، ہم نے ظلم کر ڈالا۔ 

98۔ تم اور اللہ کے سوا جن کی تم عبادت کر رہے ہو، وہ دوزخ کا ایندھن بنوگے370۔ وہاں تم آکر پہنچنے والے ہی ہو۔ 

99۔ اگر وہ معبود ہو تے تو یہاں نہ آئے ہوتے۔ سب لوگ اس میں ہمیشہ رہیں گے۔ 

100۔ وہاں ان کے لئے سسک سسک کر رونا ہی ہے۔ وہ لوگ وہاں کچھ بھی نہ سنیں گے۔

101۔ جن کے بارے میں ہماری مدد سبقت لے گئی وہ لوگ اس سے دورکئے گئے ہیں370۔ 

102۔ وہ اس کی شور نہیں سنیں گے۔ ان کے دل کی خواہشوں میں وہ ہمیشہ رہیں گے۔ 

103۔ سب سے بڑی گھبراہٹ انہیں غمگین نہیں کرے گی۔ فرشتے ان کی استقبال کر یں گے۔ (اور کہیں گے کہ) یہی وہ دن ہے جس کا تم سے وعدہ کیا گیا تھا۔ 

104۔ لکھے ہوئے اوراق لپیٹنے کی طرح آسمان507 کو ہم لپیٹنے کے دن 1جس طرح ہم نے پہلی تخلیق کی ابتدا کی تھی اسی کو ہم پھر سے قائم کریں گے225&453۔ یہ ہمارا وعدہ ہے۔ ہم (کچھ بھی) کر نے والے ہیں۔ 

105۔ ہم نے زبور میں نصیحت کے بعد لکھا تھا کہ میرے نیک بندے زمین کے وارث بنیں گے۔ 

106۔ عبادت گزار لوگوں کے لئے اس میں کافی چیزیں ہیں

107۔ (اے محمد!) جہاں والوں281 کے لئے ہم نے تمہیں رحمت بنا کر بھیجا ہے187۔ 

108۔ پوچھو کہ مجھے یہی وحی کی گئی ہے کہ تمہارا معبود ایک ہی معبود ہے، کیا (تم) اسے قبول کر رہے ہو؟ 

109۔ اگر وہ جھٹلائیں توکہہ دو کہ تم سب کو یکساں اطلاع کر چکا ہوں192۔ تمہیں جو انتباہ کیا جا رہا ہے وہ قریب ہے یا دور، میں نہیں جانتا۔ 

110۔ وہ اونچی آواز بھی جانتا ہے اور تم جو چھپاتے ہو وہ بھی جانتا ہے۔ 

111۔ میں نہیں جانتا کہ یہ (دنیوی زندگی) تمہارے لئے آزمائش484 ہو گی یا مقررہ مدت تک زندگی خوشحال ہوگی؟

112۔( پیغمبرنے)کہا کہ اے میرے رب!تو حق کے ساتھ فیصلہ فرما۔ تم جو کہہ رہے ہو اس کے مقابلے میں میرا پروردگار رحمن ہی مددکے لئے مجھے تلاش ہے۔

You have no rights to post comments. Register and post your comments.

Don't have an account yet? Register Now!

Sign in to your account